پیر جی عبد العلیم رائے پوری شہیدؒ اور دیگر مرحومین

مجلہ/مقام/زیراہتمام: 
ماہنامہ الشریعہ، گوجرانوالہ
تاریخ اشاعت: 
فروری مارچ ۱۹۹۵ء

ملک میں دہشت گردی اور تشدد کے واقعات میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اور قیمتی جانیں اس کی بھینٹ چڑھ رہی ہیں۔ گزشتہ دنوں چیچہ وطنی ضلع ساہیوال کے معروف عالم دین پیر جی عبد العلیم رائے پوریؒ اپنے ایک ساتھی سمیت دہشت گردی کا شکار ہوگئے، انا للہ وانا الیہ راجعون۔ پیرجی عبد العلیمؒ حق گو اور بے باک عالم تھے، مجلس احرار اسلام کے راہنماؤں میں سے تھے اور بزرگ عالم دین حضرت مولانا پیرجی عبد اللطیف رائےپوریؒ کے فرزند تھے۔

اسی طرح سپاہ صحابہؓ ضلع منڈی بہاؤ الدین کے سربراہ مولانا محمد اسلم عابدؒ بھی دہشت گردی کا نشانہ بن گئے، انا للہ وانا الیہ راجعون۔

کراچی میں متعدد مساجد کے باہر دہشت گردی کی فائرنگ سے درجنوں افراد جاں بحق ہوگئے جن میں ہمارے پھوپھی زاد مولانا سید نور الحسن شاہؒ بھی شامل ہیں، انا للہ وانا الیہ راجعون۔

علاوہ ازیں سعودی عرب میں ریاض کے قریب تمیر کے مقام پر جناب قاری فدا محمد ضیاء ٹریفک کے حادثہ میں جاں بحق ہوگئے، انا للہ وانا الیہ راجعون۔ قاری صاحب مرحوم راقم الحروف کے حفظ قرآن کریم کے ساتھی تھے اور مدرسہ نصرۃ العلوم گوجرانوالہ کے سابق مدرس تھے۔ ان کی نماز جنازہ مسجد نبوی میں ادا کی گئی اور انہیں جنت البقیع میں سپرد خاک کر دیا گیا۔

اللہ تعالیٰ مرحومین کو جنت الفردوس میں جگہ دیں اور پسماندگان کو صبر جمیل کی توفیق عطا فرمائیں، آمین یا رب العالمین۔